13

کٹھ پتلی اور جعلی وزیراعظم کو نہیں مانتی: مریم نواز

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جعلی اور کٹھ پتلی وزیراعظم کو نہیں مانتی کیونکہ یہ اس کرسی کی بھی توہین ہے۔

اسلام آباد میں مسلم لیگ ن کے اجلاس میں شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا کہ ووٹ کی عزت نہیں کی جائے گی تو یہی حال ہو گا جو اب ملک کا ہو رہا ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ علیمہ خان اور دوسروں کی پراپرٹی نکل آتی ہے، نیب ان کا نام بھی نہیں لیتی، جو مہرے ہیں ان کا کیا نام لیں، یہ سب نیب کو نظر نہیں آتا۔

ان کا کہنا تھا کہ سیلیکٹڈ احتساب جب ہو تو اس ادارے کی کیا ساکھ رہ جاتی ہے؟

رہنما ن لیگ نے کہا کہ نیب نے جو کیسز بنانے ہوتے ہیں اور جسے گرفتار کرنا ہوتا ہے، وزراء اور جعلی وزیراعظم پانچ دن پہلے بتا دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جعلی اور کٹھ پتلی وزیر اعظم کو نہیں مانتی کیونکہ یہ اس کُرسی کی بھی توہین ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ ببانگ دہل کہتی ہوں کہ بیانیہ ایک ہی ہے کہ ووٹ کو عزت دو، نواز شریف کا بیانیہ بھی وہی ہے، بیان کرنے کا فرق ہو سکتا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ اگر کسی کا خیال تھا کہ بیانیہ ٹھیک نہیں تو وہ اب بھی نواز شریف کے بیانیے پر آ گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر ایک شخص کہتا ہے آئین پر عمل کرو تو کسی کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔

ن لیگ کی نائب صدر نے کہا کہ ہم تو وہ لوگ ہیں جو جعلی سزائیں اور جعلی مقدمے بھگت رہے ہیں، عوام کے ووٹ والی حکومت آئے گی تو سارے مسائل حل ہوں گے۔

ایک سوال کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ شہباز شریف بھی نواز شریف کو ہی لیڈر مانتے ہیں۔

قبل ازیں مریم نواز نے مسلم لیگ ن کے اجلاس میں شرکت سے قبل میڈیا سے غیر رسمی گفتگو بھی کی۔

ایک صحافی نے سوال کیا کہ آپ پارلیمنٹ میں بطور رکن کب آرہی ہیں؟ اس پر انہوں نے جواب دیا کہ بہت جلد انشا اللہ۔

مریم نواز نے وزیراعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عمران خان کے پاس جھوٹ بولنے کے علاوہ کچھ نہیں رہا، اس حکومت کو کسی اپوزیشن کی ضرورت نہیں، یہ حکومت خود ہی اپنے آپ کو گرادے گی۔

(ن) لیگ کی نائب صدر کا کہنا تھاکہ پارلیمان کی بالادستی اور عوام کی بالادستی، پاکستان کوانہی اصولوں پر چلنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں