45

پلوامہ واقعہ کے بعد بھارت کی طرف سے جماعت اسلامی لبریشن فرنٹ پر پابندی قابل مذمت ہے راجہ فاروق حیدر

اسلام آباد (اے ایف بی) وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ پلوامہ واقعہ کے بعد بھارت کی طرف سے جماعت اسلامی لبریشن فرنٹ پر پابندی قابل مذمت ہے حریت راہنماوں اورکشمیری نوجوانوں کو گرفتار کرکے جیلوں میں ڈالا جارہا ہے بھارت مسلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لیے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے جس میں وہ کامیاب نہیں ہوگا اس موقع پر ہم آزاد کشمیر کی حکومت تمام سیاسی قیادت متحد ویکجان ہے بھارت کی طرف سے پاکستان کے خلاف حالیہ جارحیت کے جواب میں پاکستان کی مسلح افواج نے جس جراتمدانہ انداز سے جواب دیا اس پر ہم پاک فوج کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوے کیا انہوں نے کہا کہ حکومت ہرسطح پر متاثرین سیز فاہر لاہن کی مدد کررہی ہے ہم متاثرین کے ساتھ کھڑے ہیں سیز فاہر لاہن پر ہمارے لوگ جس جراتمندی سے حالات کا مقابلہ کررہے ہیں سیز لاہن کے کچھ علاقوں کا دورہ کیا ہے اور باقی علاقوں کے دورے کے بعد متاثرین کے مساہل حل کریں گے سیز فارلاہن کے علاقوں میں ایمبولنس سروس دی گی ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان کی حکومتوں نے ہردور میں کشمیر کے حوالے سے اپنا کردار ادا کیا ہے کسی نے کم کسی نے زیادہ ہم پاکستانی قوم کے شکرگزار ہیں کہ اس نے ہر موقع پر کشمیریوں کا ساتھ دیا ہے انہوں نے کہا کہ مسلہ کشمیر حل کیے بغیر خطے میں امن کا قیام ممکن نہیں ہے وزیر خارجہ سے ملاقات مفید رہی ہے ہم تمام سیاسی قیادت سے موجودہ صورتحال پر مشاورت کررہے ہیں مشاورت سے متفقہ لاہحہ عمل تیار کررہے ہیں راجہ فاروق حیدر نے کہا کہ سیز فاہرلاہن کے متاثرین بڑے غیور ہیں وہ بھارت کے دامنے آہینی دیوار بنے کھڑے ہیں حریت راہنما فیض نقشبندی نے کہا کہ حکومت آزاد کشمیر کےاقدامات پر شکر گزار ہیں بھارت کے ناپاک عزاہم کامیاب نہیں ہوںگے جماعت اسلامی اور جے کے ایل ایف پر پابندی کی مذمت کرتے ہیں بھارت تحریک آزادی کو دبانے کے لیے مذموم حربے آزما رہا ہے جوکامیاب نہیں ہوںگے آزادی کی تحریک منزل کے حصول تک جاری رہے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں