191

میانوالی ایکسپریس اور مارگلہ ایکسپریس کے نام سے 2 ٹرینیں چلانے کا فیصلہ

لاہور (اے ایف بی) پاکستان ریلوے نے 14اور 15 ستمبر سے میانوالی ایکسپریس اور مارگلہ ایکسپریس کے نام سے 2 ٹرینیں چلانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان راولپنڈی پرائم منسٹر ہاوس سے دونوں ٹرینوں کا افتتاح کریں گے۔ دونوں ٹرینوں کے کرایوں میں پہلے روز 50فیصد رعائیت دی جائے گی۔وفاقی وزیر ریلویز شیخ رشید احمد کی ہدایت پر پاکستان ریلوے ڈیم امداد فنڈ کے لیے سالانہ دس کروڑ تک ریلوے ادا کرے گا جس کا مسافروں پہ بوجھ نہ ہونے کے برابر ہوگا۔وزیر ریلویز شیخ رشید احمد کی ہدایت پر غریب اور کم وسائل رکھنے والے طبقے کے لیے خصوصی ٹرینوں کا پلان ترتیب دیاجائے گا۔ اس ضمن میں پاکستان ریلویزدو ماہ بعد پندرہ اکتوبر سے اندورونِ سندھ کے لیے موہنجوداڑوایکسپریس کے نام سے نئی ٹرین سکھر سے کوٹری کے درمیان چلائے گا۔ یہ ٹرین سکھر ۔ لاڑکانہ ۔ دادو ۔ سہیون اور جامشورو کے درمیان چلاکرے گی ۔ جلد ہی مزدورطبقے کے لیے پشاور سے کراچی کے درمیان ایک ٹرین چلائی جائے گی۔ ریلوے ہیڈکوارٹر آفس لاہور میں ہونے والے اجلاس میں انوسٹمنٹ کمیٹی بنانے کا اعلان کیا گیا جس کی سربراہی چیئرمین ریلویز محمد جاوید انورکریں گے۔اس کمیٹی میں چیف ایگزیکٹوآفیسر پاکستان ریلویز محمدآفتاب اکبر سمیت دیگر سینئر افسران شامل ہوں گے اور پاکستان ریلوے میں سرمایہ کاری کرنے والے بیرونِ ملک مقیم پاکستانی اور سرمایہ کاروں کی ریلوے میں سرمایہ کاری کے حوالے سے رہنمائی کریں گے اور ان کی تجاویز پر غور بھی کریں گے۔ اس کے علاوہ سی پیک ایویلویشن کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا گیا جو سی پیک کے حوالے سے تما م اہم معاملات پر سفارشات پیش کرے گی۔ وفاقی وزیر ریلویز شیخ رشید احمد کی ہدایت پرسی پیک کے تحت مستقبل کے ٹریک اور بزنس کو مدِ نظر رکھتے ہوئے گوادر کو ڈویژنل ہیڈکوارٹرز کا درجہ دینے کا فیصلہ کیا گیا۔اس کے علاوہ ریلوے ٹرانسپورٹ فریٹ کمپنی اور جام شورو پاور کمپنی کے درمیان جامشورو پاور پلانٹ کو کوئلے کی ترسیل کے حوالے سے معاہدہ کیاگیا۔اس معاہدے کے تحت پاکستان ریلوے سالانہ چار ملین ٹن کوئلے کی ترسیل بذریعہ ریل کراچی سے جامشورو تک کرے گا ۔کوئلے کی ترسیل کے لیے پاکستان ریلوے چار ہزار ہارس پاور کے نئے انجن استعمال کرے گا۔ اس پاور پلانٹ سے 1320 میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی اور 2020 ؁ء میں اس پاور پلانٹ سے باقاعدہ بجلی پیداہونا شروع ہوجائے گی۔قبل ازیں کراچی سے قادرآباد ساہیوال پاور پلانٹ کو کوئلہ کی ترسیل کی جارہی ہے۔وزیر اعظم عمران کی شجر کاری مہم کے تحت ریلوے کی 25 نرسریاں وجود میں لائی گئیں اور ہر ڈویژن میں چار چار نرسریاں کھول رہے ہیں۔ ریلوے کی سات ڈویژنوں میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے سینٹر قائم کیے جائیں گے اور بڑے اسٹیشنوں پر وائی فائی کی سہولت دینے کا فیصلہ کیا گیاہے ۔پاکستان ریلویز جلد ہی میپل لیف کے ساتھ ایک طویل المدتی معاہدہ کرے گا جس کی معیاد دو سال ہوگی۔ اس معاہدے کے تحت ریلویز 50 ہزار ٹن کوئلہ کراچی پورٹ سے داؤد خیل تک پہنچائے گااور میپل لیف کمپنی 30 ہزار ٹن سیمنٹ داؤد خیل سے کراچی پورٹ تک بذریعہ ریل ترسیل کرے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں