314

حکومت اداکاروں کی فلاح وبہبودکے اقدامات کرے،جڑواں شہروں کے اداکاروں کا مطالبہ

راولپنڈی (اے ایف بی)راولپنڈی اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے سینئر اداکاروں نے کہاہے کہ فنکار اپنے فن سے ساری زندگی دوسروں کو ہنسانے کیلئے وقف کرتا ہے لیکن خود اپنے دل میں کئی غموں کو چھپاکر دنیا سے رخصت ہوجاتا ہے ،ان کے غموں پر مرہم رکھنے والاکوئی نہیں ہوتا، ہمارے کئی فنکار کسمپرسی کی زندگی گزررہے ہیں ،ان کا کوئی پرسان حال نہیں ،یہ فنکار ملک وقوم کا سرمایہ ہیں ،حکومت وقت کو چایئے کہ وہ اداکاروں کی فلاح وبہبودکے اقدامات کرے،جو اداکار حادثاتی موت کا شکار ہوجائیں ان کو کم ازکم 10لاکھ روپے اورماہانہ 20 ہزارروپے وظیفہ مقررکیا جائے ، انہیں صحت کی سہولیات کے ساتھ ساتھ ان کے بچوں کو تعلیم وتربیت کا بھی اہتمام کیا جائے ، ٹی وی اور اسٹیج کے سنیئر اداکار امتیازعلی کاشف اورٹی وی اداکار مطلوب الرحمان عرف منا لاہوری کی ناگہانی وفات پر ہمیں بہت دکھ ہواہے ، حکومتی سطح پر ان اداکاروں کی خدمات کو سراہا جائے اور ان کی فیملی کی مالی مدد کی جائے ۔ان خیالات کااظہار سینئر اداکار انجم حبیبی، حمید بابر ، امجد چوہدری اور چیئرپرسن ارٹسٹ ایکویٹی عاصمہ بٹ نے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سینئر اداکاروں نے کہاکہ راولپنڈی اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے اداکار بہتر صلاحیتوں کے مالک ہیں ،جڑواں شہروں کے لوگوں کو سستی اورمیعاری تفریجی فراہم کرنے کیلئے واحد تھیٹر لیاقت ہال تھا بدقسمتی سے دس سال قبل اس ہال کو بند کرواکر نہ صرف فنکاروں کا معاشی قتل کیا گیا بلکہ جڑواں شہروں کے لوگوں کوسستی اورمیعاری تفریحی سے بھی محروم کیا،لیاقت ہال کی بندش سے فنکار برداری میں تشویش کی لہر دوڑ گی ، 200سے زائد خاندانوں کے چولہے ٹھنڈے پڑگئے ،کچھ اداکار یہ شہر ہی چھوڑ کر چلے گے اور کچھ ذہنی کوفت کا شکار ہوگے،اور انہیں مختلف بیماریوں نے گھیر لیا جو انہیں موت کے منہ میں لے گئی،امتیاز علی کاشف بھی انہیں میں سے ایک ہے ، ہماری حکومت سے اپیل ہے کہ وہ اداکاروں کی فلاح وبہبودکے فنڈز مختص کرے ،اداکاروں کی حادثاتی موت کی صورت میں کم ازکم 10لاکھ روپے کی امداد اورماہانہ 20 ہزارروپے وظیفہ مقررکیا جائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں